• To make this place safe and authentic we allow only registered members to participate Registration is easy and will take only 2 minutes of your time PROMISE

ایک تازہ غزل اہل ذوق کی نذر

ہجر میں کبھی مسکرا کر تو دیکھو۔۔
غموں سے کبھی دل لگا کر تو دیکھو۔۔
تم کیا جانتے ہو وفا کا نبھانا۔۔
کبھی رنجِ الفت اٹھا کر تو دیکھو۔۔
تپتی ہوئی ریت پر لکھنا نام لیلا۔۔
کبھی ریتِ صحرا اڑا کر تو دیکھو۔۔
جو مرنے لگا پھول یادوں میں ہمدم۔۔
اسے دل کی دنیا بنا کر تو دیکھو۔۔
اڑاتے ہو تمسخر میری الفتوں کا۔۔
کبھی زخم دل پر کھا کر تو دیکھو۔۔
بناتے سبھی ہیں بہاروں سے رشتے۔۔
خزاں کو بھی دل میں بسا کر تو دیکھو۔۔
بڑا ناز کرتے ہو اپنی وفا پر۔۔
کبھی چشمِ تر کو بھی آ کر تو دیکھو۔۔


کلام رانا نصیر احم​
 
مرے خمیر میں گوندھی نہیں گئی ہجرت
میں تیرے بعد بھی تیرے نگر میں رہتا ہوں
ترا خیال ہے تکمیل کے عناصر میں
ترے خیال کے شام و سحر میں رہتا ہوں ...​
 
Top