• To make this place safe and authentic we allow only registered members to participate Registration is easy and will take only 2 minutes of your time PROMISE

Information Mir Sahib's response to Shia (میر صاحب کا شیعہ مناظر کو جواب)

Zohaib

Member
جہانگیر کی بیوی نور جہاں شیعہ تهی اسنے ایران خط لکها کہ ایران کے سب سے بڑے مناظر کو ہندوستان بهیج دو تاکہ مناظرہ میں شیعہ مذھب کی حقانیت بیان کرے اور ساتھ میں تحریر کیا کہ وہ مناظر سیدھا آگرہ نہ آئے بلکہ لاہور سے ہوتا ہوا آئے جہاں علماء نہیں ہیں بلکہ صوفیاء ہیں جن کو مات دینا آسان ہے اسطرح شیعہ مناظر کی آگرہ آنے سے پہلے دهاک بیٹھ جائے گی
شیعہ مناظر سیدھا میاں میر صاحب کے پاس پہنچا آپ اشراق کی نماز سے ابهی فارغ ہی ہوئے تهے ، جیسے ہی وہ دروازے میں سے داخل ہوا آپ نے فرمایا :
" یہ شخص جو آگے آگے آ رہا ہے اس کا دل سیاہ ہے "
علیک سلیک کے بعد حضرت نے دریافت فرمایا کیا کام کرتے ہو ؟ شیعہ مناظر بولا کہ میں ایران سے آیا ہے ہوں اور شان اہل بیت بیان کرتا ہوں
میاں میر صاحب نے فرمایا اہل بیت کی شان بیان کرو تاکہ سنی کا ایمان بڑهے
شیعہ مناظر بولا کہ امام حسین رضی اللہ عنہ کی یہ شان ہے کہ کوئی گناہ گار شخص بهی آپ رضی اللہ عنہ کے مزار کے 40 میل کے ارد گرد دفن ہو جائے تو وہ بخش دیا جاتا ہے ، میاں میر صاحب نے بار بار فرمایا پهر سنا پهر سنا اور پهر پوچها کہ امام حسین رضی اللہ عنہ کو یہ مقام کیسے ملا تو شیعہ مناظر بولا کہ آپ رضی اللہ عنہ تو محمد صل اللہ علیہ وآلہ وسلم کے نواسے تهے اس وجہ سے یہ مقام ملا
تو میاں میر صاحب نے فرمایا کہ جب نواسے کی یہ شان ہے تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی کیا عظیم شان ہو گی ، وہ بولا بے شک بڑی شان ہے پهر میاں میر صاحب نے سوال کیا کہ جو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے مزار میں انکے ساتھ سوئے ہوئے ہیں کیا وہ بخشے نہیں جائیں گے
شیعہ عالم ہکا بکا رہ گیا اور آگرہ آنے کی بجائے واپس ایران چلا گیا اور یہ کہہ کر گیا کہ جہاں کے صوفی بزرگ ایسا علم رکهتے ہیں تو یہاں کے عالموں کا کیا مقام ہو گا اور یہ وہ سوال کیا گیا ہے جس کا​
جواب قیامت تک کوئی شیعہ نہ دے پائے گا...


Mir Sahib's response to Shia

Jahangir's wife Noor Jahan, who was a Shia, wrote a letter to Iran asking her to send the biggest scenes of Iran to India to explain the legitimacy of the Shia religion in the debate and also wrote that those scenes did not come directly to Agra It is not the scholars but the Sufis who are easy to defeat.
Shia Manazar went straight to Mian Mir Sahib. He had just finished the Ishraq prayer. As soon as he entered through the door, he said:
"This person who is coming forward has a dark heart."
After Alik Salik, Hazrat asked, "What do you do?" Shiite Manazer said that he came from Iran and described the glory of Ahlul Bayt
Mian Mir Sahib said, "Explain the glory of Ahlul Bayt so that the faith of Sunnis may increase."
Shia Manazer said that it is the honor of Imam Hussain (RA) that even if a sinful person is buried around 40 miles of his shrine, he is forgiven. Mian Mir Sahib repeatedly said, "Then listen." Then he heard and then asked how Imam Hussain (RA) got this position. Shia Manazer said that he was the grandson of Muhammad (PBUH) and that is why he got this position.
Mian Mir Sahib said, "What is the great glory of the Prophet (peace and blessings of Allaah be upon him) when his grandson has this glory?" He said, "Indeed it is a great glory." Sleeping with them, will they not be forgiven?
The Shiite scholar was stunned and instead of coming to Agra, he went back to Iran and said that where the Sufi elders have such knowledge, what will be the position of the scholars here and this is the question that has been asked.

No Shia will be able to give an answer till the Day of Judgment ...
 
Top